القرآن
نعمتیں رب کی

اور زمین کو اُسی نے ساری مخلوقات کے لیے بنایا ہے، اس میں میوے اور کھجور کے گابھوں والے درخت بھی ہیں اور بھوسے والا غلہ اور خوشبو دار پھول بھی۔ اب بتاؤ کہ تم اپنے پروردگار کی کون کون سی نعمتوں کو جھٹلاؤ گے؟ (الرحمن:13-10)

 

 


الحدیث
تقوی کا دنیاوی انعام

رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا:’’اگر تم کسی چیز کو تقویٰ اور خوف خدا کی وجہ سے چھوڑ دو گے، تو اللہ پاک اس سے بہتر سے نوازے گا۔‘‘ (شعب الایمان: 53/5)

القرآن
رحمن کون؟

وہ رحمن ہی ہے، جس نے قرآن کی تعلیم دی۔ اُسی نے انسان کو پیدا کیا، اُسی نے اُس کو بات واضح کرنا سکھایا۔ (الرحمن: 4-1)

 

   


  الحدیث
عیب نہ چھپائیں

  رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’مسلمان مسلمان کا بھائی ہے، کسی مسلمان کے لیے حلال نہیں کہ اپنے بھائی سے سامان کی کسی ایسی بات کو چھپائے کہ وہ جان لیتا تو خریدنا چھوڑ دیتا۔‘‘ (مجمع الزوائد: 80/4)

القرآن
خود کو پاکیزہ نہ ٹھہرائو !

وہ (تمہارا پروردگار) تمہیں خوب جانتا ہے جب اُس نے تمہیں زمین سے پیدا کیا، اور جب تم اپنی ماؤں کے پیٹ میں بچے تھے، لہٰذا تم اپنے آپ کو پاکیزہ نہ ٹھہراؤ۔ وہ خوب جانتا ہے کہ کون متقی ہے۔ ( النجم: 32)

 

 


  الحدیث
جس نے قرض معاف کیا

  رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’جس نے کسی تنگدست اور پریشان حال کو ادائیگی میں مہلت دی، یا اس کو معاف کردیا، اللہ تعالیٰ اسے قیامت کے دن کی مصیبت سے نجات دے گا۔‘‘ (صحیح مسلم: 180)

القرآن
جنت فیملی

اور جو لوگ ایمان لائے ہیں، اور ان کی اولاد نے بھی ایمان میں ان کی پیروی کی ہے، تو ان کی اولاد کو ہم انہی کے ساتھ شامل کردیں گے، اور ان کے عمل میں سے کسی چیز کی کمی نہیں کریں گے۔ (سورہ طور: 21)

 

 


  الحدیث
تلاش میں رہو

  رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:کوئی آدمی اس وقت تک مر نہیں سکتا، جب تک اپنارزق نہ پورا کرے۔ اور رزق کو مؤخر نہ سمجھو۔ اللہ سے ڈرو، اے لوگو! تلاش رزق میں رہو۔حلال طریقے سے لو اور حرام کو چھوڑ دو۔ (حاکم، کنز:22/4)

القرآن

اﷲ کے ہاں دولت کی قدر و قیمت اور اگر یہ اندیشہ نہ ہوتا کہ تمام انسان ایک ہی طریقے کے (یعنی کافر) ہوجائیں گے تو جو لوگ خدائے رحمٰن کے منکر ہیں، ہم ان کے لیے ان کے گھروں کی چھتیں بھی چاندی کی بنادیتے، اور وہ سیڑھیاں بھی جن پر وہ چڑھتے ہیں، اور ان کے گھروں کے دروازے بھی، اور وہ تخت بھی جن پر وہ تکیہ لگا کر بیٹھتے ہیں، بلکہ انہیں سونا بنا دیتے۔ اور حقیقت یہ ہے کہ یہ سب کچھ بھی نہیں، صرف دنیوی زندگی کا سامان ہے۔ آخرت تمہارے پروردگار کے نزدیک پرہیز گاروں کے لیے ہے۔ (33-35)

تفسیر:  بتلانا یہ مقصود ہے کہ دنیاکامال و دولت اﷲ تعالی کے نزدیک اتنی بے حقیقت چیز ہے کہ اﷲ تعالیٰ کافروں سے ناراض ہونے کے باوجود ان کے آگے سونے چاندی کے ڈھیر لگا سکتا ہے۔ (آسان ترجمہ قرآن: 1028)

 


  الحدیث

استغفار کی برکت سے

حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما روایت کرتے ہیں: حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جو شخص کثرت سے استغفار کرتا ہے، اللہ تعالی اسے ہر غم سے چھٹکارا اور ہر تنگی سے کشادگی عنایت فرماتے ہیں، اور اسے ایسی جگہوں سے رزق عطافرماتے ہیں جن کا اس کے وہم و گمان میں گزر تک نہیں ہوتا۔ (ابوداؤد: 1518)

 

  


   مسنون دعا

کسی کے ہاں دعوت پر جائے

اَلَلّٰھُمَّ اَطْعِمْ مَنْ اَطْعَمَنِیْ وَاسْقِ مَنْ سَقَانِیْ۔

ترجمہ:
اے اللہ! جس نے مجھے کھلایا تو اسے کھلا اور جس نے مجھے پلایا تو اسے پلا۔