القرآن
گناہ گاروں نہ گھبراؤ!

(اللہ تعالیٰ بہترین بدلہ عطا کرے گا) ان لوگوں کو جو بڑے بڑے گناہوں اور بے حیائی کے کاموں سے بچتے ہیں، البتہ کبھی کبھار پھسل جانے کی بات اور ہے۔ یقین رکھو تمہار اپروردگار بہت وسیع مغفرت والا ہے۔ (سورہ النجم: 32)

 

 


  الحدیث
اللہ کی ایک شرط

  آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اللہ فرماتا ہے کہ میں دو مل کر کام کرنے والوں کے ساتھ رہتا ہوں، جب تک کوئی ایک دوسرے سے خیانت نہ کرے۔ جب خیانت کرتا ہے تو دونوں کے درمیان سے نکل جاتا ہوں۔ (ابوداؤد: 480)

القرآن
خود کو پاکیزہ نہ ٹھہرائو !

وہ (تمہارا پروردگار) تمہیں خوب جانتا ہے جب اُس نے تمہیں زمین سے پیدا کیا، اور جب تم اپنی ماؤں کے پیٹ میں بچے تھے، لہٰذا تم اپنے آپ کو پاکیزہ نہ ٹھہراؤ۔ وہ خوب جانتا ہے کہ کون متقی ہے۔ ( النجم: 32)

 

 


  الحدیث
جس نے قرض معاف کیا

  رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’جس نے کسی تنگدست اور پریشان حال کو ادائیگی میں مہلت دی، یا اس کو معاف کردیا، اللہ تعالیٰ اسے قیامت کے دن کی مصیبت سے نجات دے گا۔‘‘ (صحیح مسلم: 180)

القرآن
پھر دیکھ لو میرا عذاب!

قومِ عاد نے بھی جھٹلایا، پھر دیکھ لو کہ میرا عذاب اور تنبیہات کیسی تھیں؟ ہم نے ایک مسلسل نحوست کے دن میں ان پر تیز آندھی والی ہوا چھوڑ دی تھی، جو لوگوں کو اس طرح اُکھاڑ پھینک دیتی تھی جیسے وہ کھجور کے ُاکھڑے ہوئے درخت کے تنے ہوں۔ (القمر)

 

 


  الحدیث
جھکتا وزن کرو!

  حضرت سوید بن قیس رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے وزن کرنے والے سے فرمایا کہ وزن کرو تو ذرا جھکتا وزن کرو۔ (کنزالعمال: 29)

القرآن
جنت فیملی

اور جو لوگ ایمان لائے ہیں، اور ان کی اولاد نے بھی ایمان میں ان کی پیروی کی ہے، تو ان کی اولاد کو ہم انہی کے ساتھ شامل کردیں گے، اور ان کے عمل میں سے کسی چیز کی کمی نہیں کریں گے۔ (سورہ طور: 21)

 

 


  الحدیث
تلاش میں رہو

  رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:کوئی آدمی اس وقت تک مر نہیں سکتا، جب تک اپنارزق نہ پورا کرے۔ اور رزق کو مؤخر نہ سمجھو۔ اللہ سے ڈرو، اے لوگو! تلاش رزق میں رہو۔حلال طریقے سے لو اور حرام کو چھوڑ دو۔ (حاکم، کنز:22/4)

القرآن

غربت کی وجہ سے قتل نہ کرو
(ان سے) کہوکہ:’’آئو!میں تمہیں پڑھ کرسنائوں کہ تمہارے پروردگارنے (درحقیقت)تم پرکو ن سی باتیں حرام کی ہیں۔وہ یہ ہیںکہ اُس کے ساتھ کسی کوشریک نہ ٹھہرائو،اورماں باپ کے ساتھ اچھاسلوک کرو اورغربت کی وجہ سے اپنے بچوں کوقتل نہ کرو۔ہم تمہیں بھی رزق دیں گے اوراُن کوبھی۔اوربے حیائی کے کاموں کے پاس نہ پھٹکو، چاہے وہ بے حیائی کھلی ہویاچھپی ہوئی،اورجس جان کواللہ نے حرمت عطا کی ہے اسے کسی برحق وجہ کے بغیر قتل نہ کرو۔لوگو! یہ وہ باتیں جن کی اللہ نے تاکید کی ہے تاکہ تمہیں کچھ سمجھ آئے۔(سورہ الانعام:150،آسان ترجمہ:316)
۔(سورہ الانعام:150،آسان ترجمہ:316)

 


  الحدیث

مال ودولت: نعمت بھی، فتنہ بھی

حضرت کعب بن عیاض رضی اﷲ عنہ فرماتے ہیں میں نے رسول اکرم صلی اﷲ علیہ وسلم سے سنا ،ہر امت کے لیے کوئی خاص آزمائش ہوتی ہے اور میری امت کے لیے خاص آزمائش مال ہے۔ (ترمذی شریف)

فائدہ:
مال کو آزمائش اس لیے کہا گیا کہ جس کے پاس مال آجاتا ہے وہ اپنے خدا اور اس کے احکامات کو بھول جاتاہے ۔ علامہ رومی رحمۃ اللہ علیہ کے بقول: یہ دنیا پانی میں تیرتی کشتی کی مانند ہے،اگرپانی اس کے اندر داخل ہو جائے تو وہ ڈوب جاتی ہے۔ آدمی اسی وقت تک بچا رہے گا جب تک کہ مال ودولت کی محبت اس کے دل میں گھس نہ جائے۔