تعریف (Defination)
لائی پیس (Lipase) پانی میں حل پذیر (Water soluble) خامرہ ہے جو ایک پُل کے طور پر کام کرتا ہے اور ناحل پذیر چربی میں موجود ایسٹرز (Ester) کے کیمیائی بانڈ کو پانی کی مدد سے توڑنے کا کام سر انجام دیتا ہے۔ سادہ الفاظ میں لائی پیس خامروں کی ایک ایسی نوع کا نام ہے جو عمل انہضام کے دوران چربی کو توڑنے (Fat breakdown) میں سہولت فراہم کرتا ہے۔ اور یہ ایسٹرز (Esters) کی ایک نچلی کلاس ہے یہ تمام یا پھر اکثر جانداروں میں غذائی چربی (Dietary fat) کو توڑنے(Break)، منتقل (Transport) کرنے اور ہضم (Digest) کرنے میں بنیادی کردار ادا کرتے ہیں۔

غذائی چربی سے مراد خوراک میں موجود ٹرائی گلسرائیڈ (Triglyceride)، تیل (Oil) اور چربی (Fat) ہے۔ یہ گلوکاگون (Glucagon) اور انسولین (Insulin) کی طرح لبلبہ (Pancreas) میں تیار ہوتا ہے۔ یہ تینوں خون میں موجود شکر کے تحول(Sugar metabolism) کے لیے بہت اہم ہیں۔ تاہم لائی پیسر معدہ (Stomach) اور جگر (Liver) میں بھی تیا ر ہوتا ہے جنہیں بالترتیب گیسٹرک لائی پیس (Gastric lipase) اور ہپٹک لائی پیس (Heptic lipase) کہتے ہیں۔ زیادہ ترلائی پیس چھوٹی آنت کے اندر گلسرول (Glycerol) کی زنجیر کے ایک خاص مقام پر کام کرتے ہیں۔ مثال کے طور پر انسانی پنکریاٹک لائی پیس (Human pancreatic lipase) غذائی چربی میں موجود ٹرائی گلسرائیڈ کو مونو گلسرائیڈ اور ڈائی گلسرائیڈ میں تقسیم کر دیتا ہے۔ قدرتی طور پر پائے جانے دوسرے لائی پیس مثلاً فاسفولائی پیس (Phospholipase) او ر سپنجومائی لائینیز (Sphingomyelinases روایتی لائی پیس سے علیحدہ کام کرتا ہے۔ بعض وائرسز میں بھی لائی پیس ان کوڈ کرنے والے جینز (Genes) پائے جاتے ہیں۔


٭…لائی پیس پانی میں حل پذیر خامرہ ہے جو ایک پُل کے طور پر کام کرتا ہے ٭…لائی پیس پنیر پکنے کے عمل کو تیز کرنے اور اس کے ذائقے کوبڑھانے کے لیے استعمال ہوتے ہیں ٭… لائی پیس اگر پودوں یا حلال اور شرعی طریقے سے ذبح شدہ جانوروں سے ماخوذ ہوں تو بلاشبہ حلال اور پاک ہیں ٭


ماخذ(Sources)
کریم اور خام مکھن (Raw Butter) لائی پیس کے قدرتی خوراک کے ذرائع ہیں، لیکن یہ لائی پیس سپلیمنٹ (Lipasesupplemnet) بنانے کے لیے استعمال نہیں کیے جا رہے۔ ابتدائی طور پر لائی پیس سپلیمنٹس کی صرف آنتوں میں تحلیل ہونے والی گولیاں جانوروں کے ذرائع سے بنائی جاتی تھیں جن میں ان کا معدہ اور زبان کی غدود استعمال ہو رہی تھی لیکن مزید تحقیقات اور مطالعے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ یہ بچوں کی آنتوں کی دیواروں (Walls of intestine) کے لیے بہت نقصان دہ ہے۔ لہذا اس وقت دستیاب سپلیمنٹس زیادہ تر پودوں یا یک خلوی جانداروں (Micoscopic Organisms) کو استعمال کر کے بنائے جاتے ہیں۔ پودوں میں پپیتا (Papaya) سر فہرست ہے۔ کچھ مخصوص قسم کے بیکڑیا (Bacteria)، فنجائی (Fungi) اور آرکی (Archea) بھی تجارتی پیداوار کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں۔ لائی پیس سپلیمنٹس گولیوں کے ساتھ پاؤڈر کی شکل میں بھی دستیاب ہیں۔ لائی پیس سپلیمنٹس لبلبہ کے بہت سے مسائل کے لیے بھی مفید ہیں۔

استعمالات (Uses)
پنیر اور دیگر ڈیری مصنوعات میں ذائقہ افروزی
لائی پیس نہ صر ف پنیر پکنے (Cheese-ripning) کے عمل کو تیز کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے بلکہ پنیر کی مختلف اقسام میں ذائقے کو بڑھانے کے لیے استعمال ہوتے ہیں جن میں چیڈر پنیر (Cheddar cheese) شامل ہے۔ لائی پیس دودھ کی چربی کو ہائیڈرولائز (Hydrolyse) کرنے کے لیے استعمال ہوتا ہے۔ مختلف قسم کے فیٹی ایسڈ حاصل کرنے کے لیے مختلف قسم کے لائی پیس استعمال کیے جاتے ہیں جو ایک خاص پنیری یا عمدہ ڈیری مصنوع (Better dairy product) کا ذائقہ پیدا کرتے ہیں۔ کافی وائٹنر (Coffee whitner) میں کریمی ذائقہ پیدا کرنے کے لیے بھی لائی پیس کو استعمال کیا جاتا ہے۔ لائی پیس خامریاتی طور پر ترمیم شدہ پنیر (Enzyme Modified Cheese (EMC) کی پیداوار میں بھی بہت اہم ہے۔ یہ ایک خاص قسم کا پنیر ہے جو اپنے منفرد ذائقہ کے ساتھ مرچوں (Sauces)، چٹنیوں اور ُسوپ وغیرہ کی تیاری میں استعمال ہوتا ہے۔ بچوں کی خوراک کی پیداوار

لائی پیس ترمیم شدہ چربی بنانے میں مدد دیتے ہیں جو اپنے پرورش کے فوائد (Nutritional benefits) کی وجہ سے بچوں کی خوراک (Infant formula) تیار کرنے میں کام آتی ہیں۔ صابن اور ڈٹرجنٹ کی تیاری

لائی پیس ٹیلو (Tallow) کو توڑنے میں استعمال ہوتا ہے، جو سادہ لفظوں میں جانور کی چربی کہلاتی ہے لیکن یہ خام اور اصلی چربی نہیں ہوتی بلکہ اسے ایک انتہائی خاص عمل سے گزار کر حا صل کیا جاتا ہے۔ یہ چربی جانوروں مثلاً بھیڑ، گائے یا گھوڑے وغیرہ سے حا صل کی جاتی ہے۔ اس کے علاوہ نباتاتی ذرائع بھی مارکیٹ میں مل جاتے ہیں۔ ٹیلو کا استعمال صابن کی پیداوا ر میں ضروری ہے۔ لائی پیس ڈٹرجنٹ میں داغ کو جلد صاف کر نے (Stain-digester) کے طور پر بھی استعمال ہوتے ہیں۔ کاسمیٹکس میں استعمال

لائی پیس خوشبویات (Fragrances) کی تیاری اور جلد کی دیکھ بھال کے حوالے سے کاسمیٹکس کی مصنوعات میں استعمال کیے جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ ان سے ایسٹرز (Esters) بھی بنائے جاتے ہیں۔ ادویات میں استعمال

دنیا بھر میں بہت سی ادویہ ساز کمپنیا ں (Parmaceutical companies) لائی پیس کو آپٹکلی فعال انٹرمیڈیٹس (Optically active intermediates) کی تیاری کے لیے استعمال کرتے ہیں۔

شرعی حکم (Shariah Status)
1 لائی پیس کا اصولی شرعی حکم یہ ہے کہ اگر یہ پودوں یا حلال اور شرعی طریقے سے ذبح شدہ جانوروں سے ماخوذ ہوں تو یہ بلاشبہ حلال اور پاک ہیں، اور اگر یہ حرام یا حلال لیکن غیر شرعی طریقے سے ذبح شدہ جانوروں سے ماخوذ ہوں تو حرام اور ناپاک ہیں۔ البتہ اگر تبدیلِ ماہیت ثابت ہو جائے تو ان کو بھی حلال اور پاک قرار دیا جائے گا، لیکن چونکہ اس کا ثابت کرنا انتہائی مشکل اور مختلف فیہ ہے اس لیے ایسے ذرائع سے ماخوذ لائی پیس کے استعمال سے اجتناب کرنا ہی بہتر ہے۔

2 اگرمتعین طور پر یہ معلوم نہ ہو سکے کہ کسی مصنوع (پروڈکٹ) میں استعمال کردہ لائی پیس حلال ذرائع سے لیے گئے ہیں یا حرام سے تو ایسی صورت حال میں ظنِ غالب کو بنیاد بنایا جا سکتا ہے۔ چنانچہ اگر ظن ِ غالب یہ ہو کہ ان کا ماخذ حلال ہے تو ان کو حلال اور پاک سمجھا جائے گا اور ان کو حرام یا ناپاک قرار دینے کے لیے یقینی دلیل کی ضرورت ہو گی، اور اگر ظن غالب یہ ہو کہ ان کا ماخذ حرام ہے تو انہیں حرام اور نا پاک سمجھا جائے گا اور انہیں حلال یا پاک قرار دینے کے لیے ٹھوس دلیل کی ضرورت ہو گی۔ ہماری اب تک کی معلومات کی روشنی آج کل لائی پیس اکثر و بیشتر پودوں سے ماخوذ ہوتے ہیں۔ اگر یہ بات درست ہے تو اس پر ظنِ غالب کا مذکورہ قاعدہ لاگو کیا جا سکتا ہے۔ اس کے باوجود اگر کوئی شخص تقوی کی بنیاد پر ایسے مشتبہ لائی پیس کے استعمال سے اجتناب کرے تو یہ ایک پسندیدہ عمل ہے۔