مارکیٹنگ ایسے بھی ممکن ہے!

چند ہفتے پہلے SCS میں ایک کاروباری شخص تشریف لائے۔سلام دعا ہوئی ۔ اس کے بعد وہ گویا ہوئے کہ وہ ایک سوال پوچھنا چاہتے ہیں۔ پھر انہوں نے اپنے سوال کی طرف آنے کے لیے پورا پس منظر ذکر کیا جو کچھ یوں تھا۔ میرا ایڈورٹائزنگ کا کاروبار ہے۔ میرے پاس سائن بورڈ ہوتے ہیں اور کمپنیوں کو کرایے پر دیتا ہوں۔ کمپنیاں ان پر اپنی تشہیری اسکنز (بینرز) لگاتی ہیں۔ آپ کو معلوم ہے کہ آج کل تشہیری بینرز غیر شرعی چیزوں پر مشتمل ہوتے ہیں۔

مزید پڑھیے۔۔۔

مسلمان تاجر، اسلام کا داعی

مشہورمغربی مصنف سٹین لی پول نے اپنی کتاب ’’اسلام ان چائنا‘‘میں مسلمان تاجروں کی خوبیوں کا ذکر ان الفاظ میں کیاہے: ’’وہ تجارتی معاملات میں امانت دار تھے اورکبھی خیانت کا ارتکاب نہیں کیاکرتے تھے۔ پھرجب وہ یہاں چین میں منصب قضاء تک پہنچے اورحاکم بنے تو انہوں نے ظلم کیانہ کبھی طرف داری سے کام لیا۔وہ عزت والے تھے اورعزت کرتے تھے۔وہ متعصب نہ تھے بلکہ جہاں تک شریعت اسلامیہ انہیں اجازت دیتی تھی وہ فراخ دل اورعالی نفس تھے۔وہ چینیوں کے ساتھ یوں مل جل کر رہتے تھے جیسے کہ ایک ہی خاندان کے افرادرہتے ہیں۔‘‘

مزید پڑھیے۔۔۔

اسلامی مالیاتی نظام کی طرف مثبت پیش رفت

گزشتہ چند ہفتوں سے مملکت خداداپاکستان میں حکومتی حلقوں میں اسلامی مالیاتی نظام کی اہمیت ،ملکی سطح پر عملی نفاذ کے لیے جامع لائحہ عمل کی تیاری،اس کام کے لیے ماہرین شریعت ومعیشت پر مشتمل کمیٹی کا قیام اور چند دن قبل اخبارات کی زینت بننے والی یہ خوش آئند خبرکہ شیخ الاسلام حضر ت مولانا مفتی محمد تقی عثمانی دامت برکاتہم کی جانب سے اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے شریعہ بورڈ کی چیئرمین شپ قبول کرنا۔ یہ سب ہی خوش آئند ہیں۔ کیونکہ مملکت خداداکے معاشی نظام کے لیے یہ بے حد ضروری ہے۔حکومتی سطح پر اس آواز کے اٹھنے میں معاشرے کے تمام طبقات نے اپنا حصہ اپنے کردار،دعا اوردوا کے ذریعے ڈالا ہے ۔

مزید پڑھیے۔۔۔

دورِ حاضر کی بعض ناجائز تجارتی صورتیں

اللہ رب العزت کا فرمان ہے: ’’اے رسولو! پاکیزہ نفیس چیزیں کھاؤ اور نیک عمل کرو، بلاشبہ میں تمہارے اعمال کو خوب جانتا ہوں۔‘‘ اس آیت سے واضح ہوتا ہے کہ اللہ پاک نے اپنے تمام انبیاء اور پیغمبروں کو اپنے اپنے وقت میں دو ہدایتیں دی ہیں:
1 حلال وپاکیزہ کھانا کھاؤ
2    نیک وصالح عمل کرو

مزید پڑھیے۔۔۔

سودے کی واپسی: راہ اعتدال کیا ہے؟

گذشتہ ہفتے ایک ڈیپارٹمنٹل اسٹور میں جانا ہوا۔ اشیا خریدنے کے بعد کیشئر کے پاس ادائیگی کے لیے کھڑا ہوا تھا تو سامنے لگے ایک بورڈ پر نظر پڑی جس پر لکھا ہوا تھا: ’’خریدا ہوا سامان ہرگز واپس نہیں ہو گا۔‘‘ اس طرح کے بورڈ تو کئی جگہ نظر آتے ہیں، آج مجھے یکایک خیال آیا اور میں نے کیشئر سے کہا: بہت سخت اصول لکھ کر لگایا ہوا ہے۔ میرے خیال میں اس میں کچھ نرمی ہونی چاہیے۔

مزید پڑھیے۔۔۔

تجارت ایک مبارک پیشہ مسلسل ترقی کے 16ضابطے

تجارت میں برکت ہے اور اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے تجارت کی ہے۔ اس لیے یہ سنت بھی ہے ۔اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد گرامی ہے: اللہ نے رزق کے دس حصے کیے ہیں اور اکیلے نو حصے تجارت میں ہیں۔لہٰذا مسلمانوں کو تجارت کی طرف راغب ہو نا چاہیے۔ جس طرح ہر کام کے اصول ہوتے ہیں، اسی طرح تجارت کے بھی کچھ اصول و ضوابط ہیں جن پر عمل کرکے ہی کامیابی مل سکتی ہے۔آج سے صدیوں پہلے صحابہ کرام نے اسلامی اصولوں کے تحت تجارت شروع کی تو لوگ ان کی ایمانداری اور خوش اخلاقی سے متاثر ہوکر اسلام قبول کرنے لگے ۔

مزید پڑھیے۔۔۔