صرف پانچ پونڈ لے کر برطانیہ آنے والا پاکستانی کیسے ارب پتی بنا؟

 یاسر پاکستانی کی کہانی خود ان کی زبانی میرا تعلق گوجر خان (جہلم) پاکستان سے ہے۔ میں آج سے25 سال قبل یعنی 1987ء میں یہاں اپنی کزن سے شادی کرنے کیلئے منگیتر بن کر آیا۔ میں سب سے پہلے گلاسگو آیا۔ کیونکہ میرے انکل اور ان کی فیملی یہاں 1958ء سے رہ رہی تھی اور میں ان کے پاس ہی آیا تھا۔

مزید پڑھیے۔۔۔

سود سے توبہ کرنے والے

ہمارا مشاہدہ یہ ہے کہ جتنے لو گ اس وقت سود سے منسلک ہیں، ان کو سود کی ضرورت کم اور اسٹیٹس کا مسئلہ زیادہ ہے۔ مگر یہ کیسا ’’اسٹیٹس‘‘ جو اللہ سے جنگ مول لے کر اختیار کیا جارہا ہے الحمد للہ ! ہم نے کبھی انشورنس بھی نہیں کروائی۔ انشورنس بھی ’’اوپر والے‘‘(اللہ پاک)کی ہی رکھی ہوئی ہے۔ یہی وجہ ہے الحمد للہ ! کبھی نقصان نہیں ہوا میں اپنے تاجر بھائیوں کو نصیحت کرتا ہوں کہ سودی معاملات سے یکسر الگ ہوجائیں۔ یہ سراسر اللہ کے ساتھ جنگ ہے اور جب آپ جدا ہوجائیں تو عزم وہمت اور اللہ پر مضبوط بھروسہ کریںچھ وقت آزمائش کا ضرور گا مگر زیادہ طویل نہیں

مزید پڑھیے۔۔۔

پرچون فروش سے ملٹی نیشنل کمپنی تک

جرمنی کے امیر ترین لوگوں میں سے ایک ارب پتی ’’ایلڈی ڈسکاؤنٹ سپرمارکیٹ‘‘ کا جانشین ’’برتھولڈالبریکت‘‘ 58 سال کی عمر میں گزشتہ دنوں انتقال کرگیا۔ البریکت فیملی سے تعلق رکھنے والے برتھولڈ اور اس کے بھائی ’’تھیوجونیئر‘‘ کی مشترکہ دولت کا تخمینہ تقریباً 18 ارب ڈالر ہے اور یہ خاندان جرمنی کا دوسرا امیرترین خاندان ہے، جبکہ جرمنی کا پہلا امیرترین شخص کارل البریکت بھی اس کا چچا ہے۔ جو 25 ارب ڈالر کی دولت کے ساتھ جرمنی کا امیرترین شخص ہے۔

مزید پڑھیے۔۔۔

شہکار آئیڈیا فریڈ اسمتھ جس نے ٹرانسپورٹیشن انڈسٹری کو ایک نیا موڑ دیا

فریڈ اسمتھ ’’FedEx‘‘ کمپنی کا بانی ہے۔ یہ دنیا کی سب سے بڑی امریکن کوریئر کمپنی ہے۔ یہ فریڈ اسمتھ کا ایک خواب تھی۔ اسمتھ چار سال کی عمر میں 40 لاکھ ڈالر کا مالک ہوگیا تھا۔ اس کے والد کا اچا نک انتقال ہوگیا تھا۔ اس نے اپنے باپ کی دولت دونوں ہاتھوں سے لُٹانے کے بجائے سنبھال سنبھال کر رکھی۔ اس میں نمایاں کردار اس کی والدہ کا تھا، جس نے ہر قدم پر اپنے بیٹے کی رہنمائی کی۔

مزید پڑھیے۔۔۔

اگلی نسل

فائزر جس نے خوبیاں اپنا کر کمپنی کو کامیاب بنایا لیکن اولاد نے اسے مشکل میں ڈال دیا چارلس فائزر (Charles Pfizer) ایک جرمن بزنس مین اور کیمیا گر تھا۔ جس نے جرمن سے امریکا ہجرت کر کے ایک کیمیکل کمپنی فائزر (Pfizer) کی بنیاد 1849ء میں رکھی ۔ آج اس کمپنی کو 165 سال ہو چکے ہیں۔ چارلس کا لگایا ہوا پودا آج بھی سرسبز لیکن انتظامیہ کی غلطیوں کی وجہ سے مشکلات سے دوچار ہے۔ اس طویل عرصے میں کمپنی نے مختلف اتار چڑھاؤ اور تین نسلیں دیکھ لیں جو اسے یکے بعد دیگر چلاتی آرہی ہیں۔

مزید پڑھیے۔۔۔

ایک کام ایسا

’’اگر آپ پیسے کمانے کے لیے بزنس کرتے ہیں تو پیسے کے لالچ میں آ کر بزنس ختم کر بیٹھیں گے اور اگر خدمتِ خلق کے لیے کاروبار کرتے ہیں تو اس نیکی کی وجہ سے بزنس کو عروج پر لاکھڑا کرتے ہیں۔‘‘ یہ بات ہنری کی زندگی کا تجربہ اور نچوڑ ہے، جس نے ایک حقیقت کو آشکار کیا ہے۔ اب ہم ہنری ہینز کی کہانی اس کی زبانی سنتے ہیں۔

 

مزید پڑھیے۔۔۔