گزشتہ سالوںمیں سیمنٹ کی پیداوار اپنی موجودہ گنجائش سے بھی کم رہی ہے۔ اس کامطلب ہے کہ سیمنٹ کی پیداوار میں اضافہ تو دور کی بات ،موجودہ پیداواری گنجائش کو بھی استعمال نہیں کیا جا رہا۔
2008ئ 80.14 فیصد

2009ئ 73.83 فیصد
2010ئ 75.25 فیصد
2011ئ 72.95 فیصد
2012ئ 72.63 فیصد
2013ئ 74.68 فیصد
سیمنٹ برآمدات
2010 0.96 فیصد
2011 11.47 فیصد
2012 9.12 فیصد
2013 2.26 فیصد
سیمنٹ کی برآمدات گزشتہ چار سالوں سے مندی کا شکار ہیں
2010ئ 10649156 میٹرک ٹن
2011ئ 9427943 میٹرک ٹن
2012ئ 8567830 میٹرک ٹن
2013ئ 8374103 میٹرک ٹن
2013ء میں سیمنٹ کی فروخت 2010ء سے بڑھ جائے گی۔2013 ء میں سیمنٹ کی مقامی ترسیلات 25.06ملین ٹن ہے، جو گزشتہ سال کی نسبت سے1.1ملین ٹن زیادہ ہے۔2013 ء کے لیے جاری کردہ اعداد و شمار سے اندازہ ہوا کہ تعمیراتی کاموں میں معمولی کمی دیکھنے میں آئی ،جس کی وجہ نئی حکومت کے آنے میں وقت لگنا تھا۔ مالکان ہدایات کے لیے نئے معاشی منیجرز کی جانب سے ہدایات جاری ہونے کے منتظر رہے۔ موجودہ مالی سال سیمنٹ کے شعبے کے لیے ایک نئی زندگی لائے گا۔ اس کی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ہو گا۔ نئی حکومت انفرااسٹرکچر اور معاشی نشوونما کو اہمیت دے رہی ہے۔ اس سے مالی سال2014 ء میں سیمنٹ کی ترسیلات میں گزشتہ سال سے7 سے8 فیصد مزید اضافہ ہو گا۔
2013ء
ماہ بہ ماہ سیمنٹ کی برآمدات
جنوری 523364 میٹرک ٹن
فروری 653928 میٹرک ٹن
مارچ 768562 میٹرک ٹن
اپریل 754324 میٹرک ٹن
مئی 785381 میٹرک ٹن
جون 665546 میٹرک ٹن