کمپنی کا آرٹیکل

یوں تو کمپنیاں آرڈیننس 1984ء کی روشنی میں بزنس کرنے کی پابند ہیں، لیکن آرڈیننس سے ہٹ کر ایک اور چیز بھی ہے۔ جس میں لکھی ہر چیز کمپنی کے لیے حرف آخر کا درجہ رکھتی ہے، وہ ہے کمپنی کا آرٹیکل آف ایسوسی ایشن۔ یہ آرٹیکل کمپنی آرڈیننس 1984ء کی روشنی میں ہی ترتیب دیا جاتا ہے۔ کیونکہ ہر کمپنی کے بزنس کی نیچر اور نوعیت دوسری کمپنی سے مختلف ہوتی ہے۔اس لیے کمپنی کے لیے اندرون خانہ ایک قانو نچہ ہونا چاہیے، جس میں اس بزنس کے متعلق ضروری چیزیں بیان کر دی جائیں،مثلاً: کمپنی کیسے بزنس کرے گی؟ کتنا لون لے سکتی ہے؟ڈائریکٹر زکے اختیارات کس حد تک ہیں؟ شیئرز کیسے جاری کیے جائیں گے؟وغیرہ ۔

مزید پڑھیے۔۔۔

چند نصیحتیں جو یقینی فوائد کی حامل ہیں

کام کام اور کام
معاملہ دنیا کا ہو یا آخرت کا، اس کے لیے انسان کی عملی کوشش کو بڑی اہمیت حاصل ہے۔ کسی سیانے کا مقولہ ہے: ’’بے کار نہ رہ، کچھ کیا کر‘‘ شریعت نے ہمیں یہی سکھایا ہے۔ جس نے کوشش کی، اس نے پالیا۔ اہل اللہ بھی یہی فرماتے ہیں: ’’ہاتھ بکار، دل بیار۔‘‘ یعنی ’’ہاتھ تو کام میں لگے ہوئے ہیں، مگر دل اللہ تعالیٰ کی یاد میں مشغول ہے۔‘‘

مزید پڑھیے۔۔۔

نان بینکنگ فنانسنگ کمپنیاں

کاروبار بڑے پیمانے پر ہو تو اس کے لیے فنانسنگ بھی زیادہ درکار ہوتی ہے۔ پھر کاروباری ضرورت کے لیے ایک تاجر کو ایسے اداروں سے رجوع کرنے کی ضرورت پیش آتی ہی ہے، جہاں سے اس کی مالی ضرورت پوری ہو سکے۔ ان اداروں میں سر فہرست ’’بینکوں‘‘ کا نام آتا ہے، جو کاروبار کے لیے فنانس مہیا کرتے ہیں۔ سودی بینک تو مخصوص شرح سے اس پر سود چارج کرتے ہیں، جب کہ اسلامی بینک اسلامی ذرائع تمویل اختیار کر کے بزنس کی مالی ضرورت کو پورا کرتے ہیں۔ ایک اچھا بزنس مین ہمیشہ حلال ذرائع سے ہی اپنے بزنس اور کاروبار کی ضرورت کو پورا کرتا ہے۔

مزید پڑھیے۔۔۔

مارکیٹ کی شعبہ جاتی تقسیم

انڈیا میں ٹاٹا کمپنی نے مرسڈیز بنز کار متعارف کرائی ہے۔ بہت سے لوگوں کو کار کی تو ضرورت ہے، مگر اس طرح کی مہنگی اور لگثرری کار بہت کم لوگ خریدنا چاہتے ہیں۔ اکثر لوگ سنٹرو اور ماروٹی خرید کر ہی خوش رہتے ہیں۔ کچھ ایسے بھی ہیں جو لگثرری کار تو خریدنا چاہتے ہیں، لیکن مرسڈیز نہیں خریدنا چاہتے، کیونکہ مرسڈیز گاڑی رکھنے والوں پر محکمہ انکم ٹیکس بھی گہری نظر رکھتا ہے۔ ایسے لوگ ہنڈا سٹی، فورڈفیسٹا اور ان جیسی دوسری آرام دہ گاڑیاں پسند کرتے ہیں۔

مزید پڑھیے۔۔۔

بجٹ کیوں ضروری ہے؟

کمپنیاں اپنی پرفارمنس اور معیار جانچنے کے لیے بجٹ بناتی ہیں۔ یہ اس لیے ضروری ہوتا ہے تا کہ ہم پہلے سے اپنی کاسٹ کا اندازہ لگا سکیں اور پھر اس کی بنیاد پر اپنی Prices مقرر کر سکیں۔ نیز تاکہ ہمارے بجٹ اور حقیقی اعداد وشمار میں کتنا فرق آیا ہے ،اس کو جانچ کر مستقبل کا ایک اچھا خاکہ تیار کر سکیں۔

مزید پڑھیے۔۔۔

سیکورٹی ایکسچینج کمیشن آف پاکستان

سیکورٹی ایکسچینج کمیشن آف پاکستان SECP)) پاکستان کا فنانشل اتھارٹی ادارہ ہے ، جس کا مقصد کارپوریٹ سیکٹر اور کیپیٹل مارکیٹ کی اصلاح اور ان کے لیے ایسے اصول وضوابط بنانا ہے، جس سے ملک میں خوشحالی اور ترقی کا راستہ کھل سکے۔ اس کے ساتھ ساتھ ایک ایسافریم ورک تیار کرنا جس کی بنیاد انٹرنیشنل اسٹینڈرڈز اور ان کی عملی مشق ہو۔

مزید پڑھیے۔۔۔