ایک مفید و یاد گار تحریر

برداشتایک ہندی کہاوت ہے:’’چوٹ سہے جو شہدکی، وائے گرو میں داس۔‘‘ یعنی جو شخص کسی کے الفاظ کی چوٹ کو سہہ سکتا ہے، وہ اس قابل ہے کہ وہ قائد (leader)بن سکے اور وہ لوگوں کا مخدوم بن سکے۔

 

مزید پڑھیے۔۔۔

منیجرز کی چھ کمزوریاں

اکثر مزدور اپنے منیجرز سے خفا رہتے ہیں۔ اس کی وجہ کیا ہے؟ ایسا کیوں ہوتا ہے؟ یہ اس وقت پتا چل سکتا ہے جب انسان خود احتسابی کی زحمت گوارا کرے۔ آئیے! اس نشست میں اسی حوالے سے غور کرتے ہیں۔ دیے گئے نکات پر غور کرنے سے رویے میں بہتری اور نتیجتاً ماحول خوش گوار ہو کر ادارہ ترقی کی راہ پر گامزن ہو جائے گا۔

مزید پڑھیے۔۔۔

بہتر تعلقات کے لیے

تجارتی دنیا میں لوگوں سے میل جول ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے۔ آپ دو کاندار ہوں، سیلز مین ہوں یا کمپنی منیجر، لوگوں سے ملے جلے بغیر آپ تجارت میں کامیاب نہیں ہو سکتے۔ قدرت نے انسانی دماغ میں متاثر کرنے اور متاثر ہونے دونوں قسم کی صلاحیتیں ودیعت رکھی ہیں۔ کسی کے ساتھ ملاقات کا اثر انسان پر دیر تک رہتا ہے۔ ایک ہنستے مسکراتے شخص سے ہونے والی ملاقات زمانے تک یاد رہتی ہے۔

مزید پڑھیے۔۔۔

آڈٹ کیا ہوتا ہے؟

آڈٹ کیا ہوتا ہے؟
کمپنی کے مالک چونکہ براہ راست بزنس میں انوالو نہیں ہوتے اورکمپنی میں ڈائریکٹرز کی زیر نگرانی ہی کا روبار چل رہا ہوتا ہے تو ممبرز اور مینجمنٹ کے درمیان اختلاف پیدا ہو سکتا ہے۔اس اختلاف سے بچنے کے لیے قانون نے آڈٹ کا طریقہ متعارف کروایا ہے۔آڈٹ کمپنی کے مالی معاملات کا بھی ہو سکتا ہے اور آپریشنل امور سے بھی متعلق ہو سکتا ہے۔ بنیادی طور سے آڈٹ دو طرح سے کیا جا سکتا ہے:

مزید پڑھیے۔۔۔

وژن: کامیابی کا استعارہ

’’میں دنیا کا کامیاب ترین انسان بننا چاہتا ہوں۔ میری خواہش ہے میرا کاروبار پوری دنیا میں پھیلا ہوا ہو۔ دولت، عزت، شہرت اور دنیا بھر کی سہولیات میرے قدموں میں ہوں۔ قسمت ایسی ہو کہ مٹی ہاتھ میں لوں تو سونا بن جائے۔‘‘یہ الفاظ آج کے دور میں کسی بھی شخص کے خیالات اور خواہشات کی نمائندگی کر سکتے ہیں۔ تاہم ایسے خواب کی تعبیر پانے کے لیے پہلے خواب دیکھنا ضروری ہے۔ جسے مینجمنٹ کی اصطلاح میں ’’وژن‘‘ کہتے ہیں۔ آئیے! اپنے مستقبل کی خاطر وژن سے متعلق جانتے ہیں۔

مزید پڑھیے۔۔۔

کاروبار کی5اہم بنیادیں

کوئی بھی کاروبار یا کام شروع کرنے سے پہلے مندرجہ ذیل 5امور پر توجہ دینا نہایت ضروری ہے۔ بلا سوچے سمجھے اور وسائل کو ترتیب دیے بغیر چھوٹے یا بڑے منصوبے کو عملی جامہ پہنانا مشکل ہوتا ہے۔ اگر کوئی منصوبہ شروع کر بھی دیا جائے تو وہ ناکامی کا منہ ہی دیکھتا ہے۔ پانچ اہم اصول یہ ہیں:

مزید پڑھیے۔۔۔