ملٹی نیشنل کمپنیاں بنائیے

امریکا کی 80 فیصد تجارت ملٹی نیشنل کمپنیاں کرتی ہیں جو پوری دنیا میں پھیلی ہوئی ہیں۔ ان کمپنیوں سے امریکا کو کتنا فائدہ ہوتا ہے، اس کا اندازہ یوں لگایا جا سکتا ہے کہ امریکا کی 100 بڑی کمپنیوں نے (جو پوری دنیا کی دولت کے پانچویں حصے کی مالک ہیں) 1995 ء میں دو ٹریلین ڈالرز کا نفع کمایا۔ اس کے لیے انہوں نے 6 ملین مزدوروں کو ہائر کیا۔ نفع کا 60
فیصد حصہ مصنوعات، جبکہ 40فیصد حصہ خدمات یعنی سروسز کے ذریعے حاصل ہوا۔

مزید پڑھیے۔۔۔

کمائی سے زیادہ سیکھنے پر توجہ دیں

’’ملازمین اتنی ہی محنت کرتے ہیں کہ انہیں نوکری سے جواب نہ ملے اور مالک اتنی ہی تنخواہ دیتے ہیں کہ وہ چھوڑ کر نہ جائیں۔‘‘ اگر آپ کمپنیوں کے پے سکیل پر نظر ڈالیں تو یہی سچ ہوگا۔ اس کا نتیجہ یہ نکلتا ہے کہ اکثر ملازمین آگے بڑھنے سے محروم رہتے ہیں۔ زیادہ تر ملازمین تنخواہ، سہولتوں اور انعامات کے لیے کام کرتے ہیں۔ تھوڑی مدت کے لیے اس کے فوائد ہیں مگر آخر کار اس کا انجام بھیانک ہوتا ہے۔ اس کے بجائے آپ اور خاص کر نوجوان ایسی نوکری کریں جہاں کمائی سے زیادہ سیکھنے کے مواقع میسر ہوں، کوئی بھی پیشہ اپنانے سے پہلے اچھی طرح سوچیے، مستقبل میں جھانکیے، پھر فیصلہ کیجیے کہ کون سی صلاحیتوں کا حصول فلاں فلاں پیشے کو اپنانے کے لیے ضروری ہو گا۔

مزید پڑھیے۔۔۔

تجارت بھی عبادت ہے

حضرت علی رضی اللہ عنہ سے کسی نے پوچھا: کیا وضو کرنا ضروری ہے؟ آپ نے عجیب جواب ارشادفرمایا: ’’میرا خیال ہے کہ نیت کو وضو کرانا ضروری ہے۔‘‘ یعنی نیت کو صاف اور پاک کرنا، ہر کام کو اللہ تعالیٰ کے لیے ہی کرنا، یہی نیت کی پاکی اور وضو ہے۔ یہ دنیا اللہ تعالیٰ نے انسان کے اس عارضی بسیرے کے لیے بنائی ہے، جس میں اسے اعمال کرنے کے لیے ایک مہلت دی گئی ہے۔ جسے ہم زندگی کے نام سے یاد کرتے ہیں۔

مزید پڑھیے۔۔۔

ممبرز کی سٹیچوٹری میٹنگ

کمپنی کے اصل مالک کمپنی کے ممبر ہوتے ہیں۔ بورڈ آف ڈائریکٹر تو ان ممبرز کے نمائندے اور ایجنٹ ہوتے ہیں، جو ممبرز کی حسب منشاء کاروبار کی گتھیوں کو سلجھا رہے ہوتے ہیں۔ چونکہ مالک یہی ہوتے ہیں تو ان کی رائے بعض اوقات ضروری اور کبھی مجبوری ہوتی ہے۔ ممبرز ہر وقت کمپنی آ کر کمپنی کے معاملات میں مداخلت نہیں کر سکتے۔ کیونکہ اگر ہر وقت کمپنی کے دروازے ممبرز کے لیے کھلے رکھیں تو بہت زیادہ Confliction پیدا ہو سکتا ہے۔

مزید پڑھیے۔۔۔

ملازمین کو خوش رکھیں

ملازمین ہمارے ادارے اور کمپنی کا بہترین اور قیمتی اثاثہ ہیں۔ یہی مل کر ہمارے ادارے کو تعمیر کرتے ہیں۔ ہمارے کاروبار کی عمارت انہیں کے بل بوتے پر تعمیر ہوتی ہے، اور ان کی اہمیت سے انکار بھی نہیں کیا جا سکتا۔ جب ہم ان کے وجود کی اہمیت کو تسلیم کر لیتے ہیں اور اپنے کاروبار کے لیے انہیں ناگزیر سمجھتے ہیںملازمین کے حوالے سے ہمیں دو کام کرنے چاہییں: ایک یہ کہ ملازمین کوتعلیم و تربیت دلوائیں کیونکہ ان کو ہمیشہ تعلیم اور تربیت کی ضرورت رہتی ہے۔ ملازمین کی تعلیم اور ٹریننگ آپ کے کاروبار کی ترقی میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے۔

مزید پڑھیے۔۔۔

غلطیوں سے سیکھیے

قدرت نے انسان میں بے شمار خوبیاں اور صفات رکھی ہیں۔ انہی کی بنیاد پر ایک انسان دوسرے سے ممتاز ہوتا ہے۔ اپنی غلطیوں کا اعتراف یا خود احتسابی کامیاب لوگوں کی ایک نمایاں خوبی ہوتی ہے۔ دنیا میں ترقی کرنے والے اشخاص کی زندگیوں کا مطالعہ کیا جائے تو ’’خود احتسابی‘‘ کی صفت قدر مشترک نظر آتی ہے۔ اس دنیا میں ترقی ہمیشہ اسی شخص نے کی جو اپنی غلطیوں اور خامیوں کو پہچان گیا۔

مزید پڑھیے۔۔۔